لڑکیوں کے ساتھ باتیں کرنا محمد شامی کو مہنگا پڑ گیا، ایسا کام ہوگیا کہ بھارتی کرکٹر کی اہلیہ بھی خوشی سے نیہال ہوگئیں

لڑکیوں کے ساتھ باتیں کرنا محمد شامی کو مہنگا پڑ گیا، ایسا کام ہوگیا کہ بھارتی کرکٹر کی اہلیہ بھی خوشی سے نیہال ہوگئیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)دوسری خواتین کے ساتھ تعلقات اور اہلیہ کے الزامات بھارتی کرکٹر کو لے ڈوبے۔ بھارتی کرکٹ بورڈ نے فاسٹ بولر محمد شامی کو سینٹرل کنٹریکٹ سے

ہی باہر کردیا ۔تفصیلات کے مطابق بھارتی کرکٹر محمد شامی کی اہلیہ کی جانب سے اپنے شوہر پر دوسری خواتین کے ساتھ ناجائز تعلقات کے الزام لگانے کا سلسلہ جاری ہے۔حال ہی میض محمد شامی کی بیوی نے نیا شوشہ چھوڑتے ہوئے کہا کہ شامی کے پاکستانی لڑکی سے ناجائز تعلقات ہیں۔بھارتی کرکٹ بورڈ نے فاسٹ بولر محمد شامی کو سینٹرل کنٹریکٹ سے ہی باہر کردیا۔بھارتی میڈیا کے مطابق بی سی سی آئی کی فہرست میں محمد شامی کا نام شامل تھا تاہم ان کا نام آخری وقت میں نکالا گیا ، اور اس کی وجہ گزشتہ روز ان کی اہلیہ کی جانب سے لگائے گئے الزامات ہیں، بی سی سی آئی کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق شامی کی اہلیہ کے ان پر الزامات کی وجہ سے انہیں سینٹرل کنٹریکٹ میں شامل نہیں کیا، فاسٹ بولر کو کنٹریکٹ دینے کے بارے فیصلہ پولیس تحقیقات مکمل ہونے کے بعد ہی کیا جائے گا۔ واضح رہے کہ محمد شامی کی اہلیہ حسین جہان نے محمد شامی کی مختلف لڑکیوں کیساتھ واٹس ایپ پر ہونے والی مبینہ گفتگو کے سکرین شاٹس بھی سوشل میڈیا پر شیئر کئے ہیں اور اس کے علاوہ کچھ لڑکیوں کی تصاویر بھی اپ لوڈ کی

حسین جہان کا کہنا ہے کہ ”میں نے جو کچھ بھی سوشل میڈیا پر پوسٹ کیا ہے وہ سب آٹے میں نمک کے برابر ہے۔ اس کے کئی لڑکیوں کیساتھ تعلقات ہیں۔“ محمد شامی کی اہلیہ کو جب اس کا فون ملا تو وہ لاک تھا لیکن متعدد بار کوشش کے بعد وہ اسے کھولنے میں کامیاب ہو گئیں اور پھر واٹس ایپ اور دیگر ایپلی کیشنز پر ہونے والی گفتگو تک بھی جا پہنچیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ”اگر میں غلط نہیں ہوں تو یہ فون 2014ءمیں دہلی ڈئیرڈیلوز کی طرف سے اسے تحفے میں ملا تھا، لیکن وہ ہمیشہ اس بات کی تردید کرتا رہا ہے۔“ حسین جہان نے محمد شامی کیخلاف قانونی کارروائی کرنے کا ارادہ کر لیا ہے کیونکہ انہوں نے یہ الزام بھی عائد کیا ہے کہ محمد شامی اور اس کے گھر والے گزشتہ دو سال سے اسے ذہنی اور جسمانی تشدد کا نشانہ بنا رہے ہیں جبکہ کئی مرتبہ تو جان سے مارنے کی کوشش بھی کر چکے ہیں۔ حسین جہان نے بھارتی خبر رساں ادارے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ”فیملی کا ہر شخص مجھ پر تشدد کرتا ہے۔ اس کی ماں اور بھائی گالیاں دیتے ہیں اور تشدد صبح

کے 2 سے 3 بجے تک جاری رہتا تھا۔ وہ تو مجھے مارنا ہی چاہتے تھے۔“ محمد شامی آخری مرتبہ جنوری میں جنوبی افریقہ کیخلاف ٹیسٹ سیریز کھیلنے کیلئے بھارتی ٹیم کیساتھ گئے تھے تاہم ون ڈے اور ٹی 20 ٹیم میں شامل نہ ہونے پر واپس بھارت آ چکے ہیں اور اس وقت دھرم شالا میں دیودھار ٹرافی کھیلنے میں مصروف ہیں جن کی جانب سے تاحال کوئی جواب سامنے نہیں آیا۔ حسین جہان نے یہ دعویٰ بھی کیا ہے کہ محمد شامی نے جنوبی افریقہ کیخلاف ٹیسٹ سیریز کھیلنے کے بعد واپس آ کر بھی اسے تشدد کا نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا ”شامی نے مجھے گالیاں دیں اور مجھے مارنا شروع کر دیا، وہ یہ سب کچھ بہت عرصے سے کر رہا ہے لیکن اب میں نے بہت برداشت کر لیا۔میں نے اپنی فیملی اور بیٹی کی خاطر خود کو سمجھانے کی بہت کوشش کی لیکن وہ مجھے ہراساں کرتا رہا اور جب مجھے اس کے کرتوتوں کا پتہ چلا تو سب کچھ ختم ہو گیا۔ میں یہ سب کچھ مزید برداشت نہیں کر سکتی اور میں نے شامی کے خلاف تمام ثبوتوںکی بنیاد پر قانونی کارروائی کا فیصلہ کر لیا ہے۔“ بنیاد پر قانونی کارروائی کا فیصلہ کر لیا ہے۔“

دوستوں کے ساتھ شیئر کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں